بے حیائی سے متعلق بیان پر شیریں مزاری، فوادچوہدری اور ایمان مزاری بھڑک گئے

0 41

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) پیر کے روز وزیراعظم عمران خان کی احساس ٹیلی تھون میں شریک مولانا طارق جمیل نے ملک میں پھیلنے والی بے حیائی کا تذکرہ کیا تھا اور کہا تھا کہ کسی قوم میں بے حیائی آجائے تو اس پر عذاب آجاتا ہے ۔شیریں مزاری نے اپنی ٹویٹ میں کہا ہے کہ یہ کہنا مضحکہ خیز ہے کہ کورونا وائرس جیسی وبا چھوٹے بازو پہننے
والی خواتین یا نجی اسکولوں / یونیورسٹیوں میں نوجوانوں کو گمراہ کرنے کا نتیجہ ہے۔

 

 

یہ عالمی وبا سے مکمل لاعلمی اور عورت بیزاری ہے اور یہ مکمل طور پر ناقابل قبول ہے۔ شیریں مزاری نے مزید کہا کہ ہم اس طرح کے مضحکہ خیز الزامات کی آڑ میں خواتین کو ٹارگٹ بنانا قبول نہیں کریں گے۔ ہم نے پاکستان میں اسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین کے تحت اپنے حقوق کے دعوے کے لئے سخت جدوجہد کی ہے۔ شیریں مزاری کے بعد شیریں مزاری کی صاحبزادی ایمان مزاری بھی پیچھے نہ رہیں اور مولانا طارق جمیل پر تنقید کرتے ہوئے لکھا کہ طارق جمیل جیسے لوگوں کا اسلام عورت کے لباس سے شروع ہو کر عورت کے جسم پر ختم ہوتا ہے۔ یہ ایک گندے ذہن کی علامت ہے. گزارش ہے کہ مولانا طارق جمیل عورت کے جسم سے توجہ ہٹا کر سچے دل سے خدا سے رجوع کریں بے شک خدا معاف کرنے والا ہے۔

 

 

- Advertisement -

طارق جمیل جیسے لوگوں کا اسلام عورت کے لباس سے شروع ہو کر عورت کے جسم پر ختم ہوتا ہے۔ یہ ایک گندے ذہن کی علامت ہے. عرض ہے کہ مولانا طارق جمیل عورت کے جسم سے توجہ ہٹا کر سچے دل سے خدا سے رجوح کریں بے شک خدا معاف کرنے والا ہے. شیریں مزاری کے ٹویٹ کو قوٹ کرتے ہوئے فواد چوہدری نے لکھا کہ دین ملا فساد فی سبیل اللہ۔

 

- Advertisement -

سوشل میڈیا صارفین نے شیریں مزاری اور فواد چوہدری پر کڑی تنقید کی اور کہا کہ شیریں مزاری انسانی حقوق کی وزیر ہیں لیکن اس نے کبھی انسانی حقوق کیلئے کوئی ڈھنگ کا کام نہیں کیا، بس وزارت پر بوجھ بنی ہوئی ہیں، اس عورت نے کبھی عمران خان کا دفاع نہیں کیا لیکن جب بات بیٹی پر آتی ہے تودفاع کیلئے سامنے آجاتی ہے جبکہ سوشل میڈیا صارفین نے فواد چوہدری کو مذہب بیزار قرار دیدیا

- Advertisement -

- Advertisement -

- Advertisement -

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.